مدینے کی تباہی اور محمدﷺ کے آنسو

Muhammad Qasim's Dreams in Urdu Language
Post Reply
User avatar
Mansoor.Ali
Posts: 51
Joined: Sun Dec 31, 2017 7:02 pm

مدینے کی تباہی اور محمدﷺ کے آنسو

Post by Mansoor.Ali » Sun Feb 04, 2018 9:14 pm


ستمبر ۲۸، ۲۰۱۵

میں رات کے اندھیرے میں کہیں جا رہا ہوتا ہوں۔ مجھے خود بھی سمجھ نہیں آتی کہ کہاں جاؤں۔ چلتے چلتے میں کیا دیکھتا ہوں کہ ایک کھلے آسمان کے نیچے چارپائی پرحضرت محمدﷺ لیٹے ہوئے ہوتے ہیں۔ میں بھاگ کراُنکے پاس جاتا ہوں اور چارپائی پہ بیٹھ کے اُن سے کہتا ہوں: ’’آپ یہاں کیوں لیٹے ہوئے ہیں؟ آپ اپنے گھر جا کے کیوں نہیں سوتے؟‘‘ تو آپ ﷺ فرماتے ہیں: ’’بیٹا، کون سا گھر؟ جو گھر میں نے بنایا تھا، اُس میں کچھ لوگوں نے قبضہ کر لیا ہے اور میرے گھر میں جو لوگ میرے ساتھ تھے وہ گروہوں کی شکل میں گھر سے بھاگ گئے ہیں۔ اورجن لوگوں نے میرے گھر پہ قبضہ کیا ہوا ہے، وہ میرے گھر کو بُری طرح سے توڑ رہے ہیں"۔

اِسی دوران میں زندگی میں پہلی بار محمدﷺ کی آنکھوں کی طرف دیکھتا ہوں۔ جب میری آنکھیں محمدﷺ کی آنکھوں کی طرف دیکھتی ہیں، تو وہیں جم جاتی ہیں اور ہٹتی ہی نہیں۔ مجھے ایسے لگتا ہے جیسے محمدﷺ کی آنکھوں میں اللہ نے اپنا پورا نُور بھر دیا ہو۔ یہ ناقابل یقین منظر تھا میرے لیے۔ میں نے آپﷺ آنکھیں پُرنم دیکھیں۔

حضرت محمدﷺ نے مجھ سے کہا: ’’میرے بیٹے، تم اللہ کی مدد سے میرے گھر کواِن لوگوں سے آزاد کراؤ اور میرے گھر کو دوبارہ سے آباد کرو۔ اور میری اُمّت کی رہنمائی کرو۔ اِن سب کو پِھر سے ایک قوم بناؤ تاکہ میرے گھر کا پوری دنیا میں بول بالا ہو جیسا کہ اِس سے پہلے تھا۔ اور خوف مت کرنا، اللہ تمھارے ساتھ ہے۔ وہ ہرحال میں تمہاری مدد کرے گا۔ تم میرے بیٹے ہو اور ایسا ہو ہی نہیں سکتا کہ اللہ میرے بیٹے کو اکیلا چھوڑ دے۔‘‘ میں نے محمدﷺ کی پُرنم آنکھوں کو دیکھ کے کہا: "جتنا بھی خطرہ کیوں نہ ہو، میں آپکا یہ کام اللہﷻ کی مدد سے ضرور کروں گا۔ یہ سن کر محمدﷺ کی آنکھوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور آپﷺ دعا کرنے لگے: ’’اے اللہ، میرے بیٹے کی مدد کرنا"۔

پِھر میں وہاں سے نکلا اور اللہ کے نُور نے مجھے محمدﷺ کے گھر کا راستہ دکھایا۔ جب میں محمدﷺ کے گھر پہنچا تو میں نے کہا: ’’قاسم! یہ تو میرا ہی گھر ہے۔‘‘ پِھر میں نے دیکھا کہ گھر کی چھت پہ کچھ مسلّح لوگ ہیں جو گھر کی نگرانی کر رہے ہیں، تاکہ کوئی اندر نا آ سکے۔ اچانک میں اپنے دائیں ہاتھ کی شہادت اُنگلی پہ اللہ کا نور دیکھتا ہوں اور پِھر میں اِسی نُور سے اُن کو ختم کرتا ہوں۔ پِھرمیں گھر کے اندر جاتا ہوں تو کیا دیکھتا ہوں کہ پُورا گھر کھنڈرات میں بدل گیا ہوتا ہے، جس کا مجھے بہت افسوس ہوتا ہے۔ پِھر میں مسلمانوں کو ڈھونڈتا ہوں کہ سب کہاں گئے ہیں؟ اور اُن سب کو میں کیسے بلاؤں؟ پِھر میں ’’اللہ اکبر، اللہ اکبر‘‘ کہتا ہوں۔ تو کچھ لوگ میری آواز سنتے ہیں اور کہتے ہیں ’’یہ کون ہے جو محمدﷺ کے گھر سے آوازبلند کر رہا ہے۔‘‘ پھر اچانک میری آنکھ کھل جاتی ہے۔
~«Just Need Your Prayers»~

Post Reply