Divine Dreams – Allah and Muhammad SAWS in Qasim Dreams

Bharat Pakistan ko Control Kare Ga

 Dec, 21, 2017

٢١ دسمبر ٢٠١٧ كا خواب- قاسم کہتے ہیں کہ اس خواب میں مجھے پتہ چلتا ہے کی امریکہ کا صدر کوئی خفیہ منصوبہ زیر بحث لانے والا ہے میں سمجھتا ہوں کہ یہ منصوبہ بھی فلسطین کے متعلق ہی ہو گا۔ پھر میں کہتا ہوں کہ یہ منصوبہ بھی مسلمانوں کے ھی کیخلاف بہت اہم منصوبہ ہو سکتا ہے۔ مجھے بھی وہاں جاکر دیکھنا چاہیے کی امریکہ کا صدر کیا باتیں کرے گا۔ پھر میں جہاز میں بیٹھ کر وھاں جاتا ھوں وہ امریکہ کا صدر ایک آفس میں بیٹھا ہوتا ہے۔ اور کچھ اور لوگ بھی وہاں ہوتے ہیں میں اندرچلا جاتا ہوں۔ کہ کسی کو کیا پتا چلے گا کہ میں کون ہوں۔ پھر اچانک کا امریکہ کا صدر کرسی سے اٹھتا ہے اور اس کے ہاتھ میں کاغذ ہوتا ہے۔ اور وہ کہتا ہے ہائی ہند۔ میں کہتا ہوں ہای ہند ؟ایسا اس نے کیا کہا؟ پھر وہ کاغذ سب کو دکھاتا ہے اور میں وہ کاغذ دیکھ کر حران ہو جاتا ہوں کہ اس پر انڈیا اور پاکستان کے نقشے کا رنگ ایک ہی ہوتا ہے۔ اور امریکا کا صدر یہ کہتا ہے کہ پاکستان پر اب بھارت کا کنٹرول ہوگا۔ اور وہ اس نقشے پر دستخط کردیتا ہے اور زور سے قہقہ لگا تا ہے۔ اور دستخط کرنے کے بعد وہ کاغذ سب کو دکھاتا ہے اور ہنستا چلا جاتا ہے۔ کہ پاکستان پر اب بھارت کا کنٹرول ہوگا۔ یہ دیکھ کر میں افسوس سے آہ بھرتا ہوں یہ تو پاکستان کے بارے میں منصوبہ بنا رہا تھا اور اس نے ہای ہند نہیں بلکہ جے ہند کہا ہو گا۔ مجھے یقین نہیں ہوتا کہ اتنی جلدی یہ منصوبہ بن گیا میں دوڑتا ہوا واپس جاتا ہوں اور پاکستان کے لوگوں کو بتاتا ہوں کہ امریکہ نے فلسطین کے بعد پاکستان کے لیے بھی منصوبہ بنالیا ہے۔ اٹھاؤ اور ملک کو بچاؤ ۔ وہ کہتے ہیں کہ قاسم پہلے بھی بہت سے منصوبے بن چکے ہیں مگر اس ملک کو ہوا کچھ بھی نہیں۔ یہ ملک وہیں کا وہیں ہے اور ہماری فوج بہت مضبوط ہے کسی میں اتنی جرت نہیں کہ وہ ہماری طرف میلی آنکھ سے دیکھیں۔ پر بھارت کو تو ہم بہت بار ہرا چکے ہیں۔ میں یہ کہتا ہوں کہ یہ صحیح ہے کہ ہماری فوج بہت مضبوط ہے اور ہم بھارت کو کئی بار ہرا چکے ہیں مگر دشمن کو کبھی کمزور نہیں سمجھنا چاہیے۔ اور اس بار بھارت کے ساتھ اور بھی طاقتیں ہیں۔ اور آپ کو یاد نہیں کہ غزوہ احد میں بھی مسلمان یہی سمجھ بیٹھے تھے کہ وہ جنگ جیت چکے ہیں۔ مگر اچانک جنگ کا رخ بدل گیا اور مسلمانوں کو بہت نقصان اٹھانا پڑا۔ دشمن کو کبھی کمزور نہیں سمجھنا چاہیے۔ جس طرح وہ منصوبہ بنا رہے ہیں ہمیں بھی اپنا ملک بچانے کے لیے منصوبہ سازی کرنی چاہیے۔ پھر میں دوسری طرف چل پڑتا ہوں اور آسمان نے مجھے کچھ پرندے اڑتے دکھائی دیتے ہیں میں کہتا ہوں کہ یہ کیسے پرندے ہیں؟ اور جب میں غور سے دیکھتا ہوں تو وہ دشمن کے جہاز ہوتے ہیں اور بہت اونچا اڑ رہے ہوتے ہیں۔ ان کو دیکھ کر میں بہت پریشان ہو جاتے ہیں کہ دشمن کے تواب جہاز بھی پاکستان میں اڑنا شروع ہوگئے ہیں۔ اور یہ پتہ بھی نہیں چلتا کہ یہ جہاز ہیں یا پرندے پر بہت اڑ رہے ہیں۔ پھر میں ایک اونچی عمارت میں جاتا ہوں اور وہاں کچھ لوگ ملتے ہیں۔ ان کو یہ سب بتاتا ہوں تو وہ دیکھ یہی کہتے ہیں کہ پاک فوج سب سنبھال لے گی۔ میں کہتا ہوں کہ پاک فوج کیا کیا کرے؟ کے سارے کام پاک فوج ہی کرے گی؟ کیا تم لوگوں کی کوئی ذمہ داری نھیں؟ میں کہتا ہوں کہ پاک فوج جو کر سکتی ہے وہ کر رہی ہے اور فنڈنگ نہ ہونے کی وجہ سے جہاں وہ نہیں ہوتے وہ وہاں سے دشمن حملہ کر دیتا ہے۔ اور پاکستان کے پاس پیسے کی بھی کمی ہو رہی ہے پیسے ہونگے توہی پاک فوج لڑے گی۔ پھر میں وہاں سے چل پڑتا ہوں اور گھر اکر یہ سوچتا ہوں کہ یہ سب لوگ سو رہے ہیں۔ اب ان کے منصوبے کو مکمل ہونے سے کیسے روکا جائے؟ اور وہیں پر ختم ہوتا ہے!

 

21 December 2017 kay Khuaab main Muhammad Qasim nay dekha kay America kay Sadar Hindustan kay zariyay Pakistan ko qaboo karnay kay mansoobay bana rahay hain. Unhon nay ye bhi dekha kay dushmanon kay jungi jahaz Pakistan ke fazaee hudood kay under parwaz kar rahay hain.

Leave a Reply

en_US