Divine Dreams – Allah and Muhammad SAWS in Qasim Dreams

Pakistan Shadeed Mushkilat Main, Aik ke Baad Dosra Bohran

August, 19, 2017

١٩ اگست ٢٠١٧ محمد قاسم کہتے ہیں کہ میں اس خواب میں ایک بڑے سے گھر کی چھت پے ہوتا ہوں اردگرد اور بھی گھر ہوتے ہیں جس گھر میں ہوتا ہوں اس گھر کی رائٹ سائیڈ میں ایک اور گھر ہوتا ہے جو تھوڑا چھوٹا اور اتنا مضبوط نہیں ہوتا وہاں مسلمان رہ رہے ہوتے ہیں اور جس گھر میں ہوتا ہوں وہاں بھی مسلمان رہے ہوتے ہیں دور مجھے دو اور بڑے گھر نظر آتے ہیں جو ایک دوسرے سے تھوڑے فاصلے پر ہوتے ہیں اور ان کے پاس کچھ اور چھوٹے چھوٹے گھر بھی ہوتے ہیں وہاں سب مسلمان ہوتے ہیں ایک دوسری طرف کچھ اور گھر ہوتے ہیں جو بہت بڑے اور بہت مضبوط اور عالیشان ہوتے ہیں وہاں سب مل کے ایک بڑا اور جدید قسم کا پلین بناتے ہیں مگر وہ اس پلین کی صرف ایک ونگ پر انجن لگاتے ہیں دوسرے ونگ پر انجن نہیں لگاتے اور اس کو اسی حالت میں اڑانے لگتے ہیں یہ دیکھ کر میں کہتا ہوں کہ یہ کس قسم کے لوگ ہیں اتنا بڑا پلان بنایا ہے مگر انجن صرف ایک ہی ونگ پر لگایا ہے اس طرح تو یہ پلین اڑتے ساتھ ہی کسی جگہ پر گر جائے گا اور تباہی مچا دے گا پھر وہ پلین کو اڑاتے ہیں پلین اڑتا ہے اور کسی طرف جانے کے لیے مرتا ہے مگر پلین تھوڑا ہی دور جاتا ہے کہ اچانک کنٹرول سے باہر ہو جاتا ہے اور جس گھر میں ہوتا ہوں اس گھر کی طرف تیزی سے بڑھتا ہے میں ڈر جاتا ہوں اور کہتا ہوں یہ پلین تو کریش ہونے والا ہے پھر جیسے ہی وہ قریب آتا ہے میں نیچے بیٹھ جاتا ہوں اور ایک زوردار دھماکے کی آواز آتی ہے مجھے ایسا لگتا ہے جیسے اسی گھر کے ساتھ گرا ہے میں ہمت کرکے اٹھتا ہوں تو کیا دیکھتا ہوں کہ وہ پلین جو ساتھ والا گھر ہوتا ہے اس کے اوپر گرا ہوتا ہے اور وہ گھر تباہ ہو جاتا ہے اور آگ کے شعلے اردگرد گراڑ رہے ہوتے ہیں اور جس گھر میں ہوتا ہوں اس گھر کی دیوار کو کافی نقصان ہوتا ہے اس گھر میں اور لوگ بھی ہوتے ہیں وہ یہ دیکھ کر ڈر جاتے ہیں پھر میں اس جگہ دیکھتا ہوں جہاں سے یہ پلین اڑا تھا تو کیا دیکھتا ہوں اس جگہ سے تھوڑی دور ہٹ کر دجال ایک گھر کی چھت پر چڑھا ہوتا ہے دجال وہاں کچھ کر رہا ہوتا ہے پھر وہ اپنی طاقتوں کا استعمال کر کے بادل اور ہوا کو اکھٹا کرتا ہے اور ایک بہت ہی خوفناک قسم کا گرج چمک کے ساتھ طوفان بناتا ہے اور اسے اس طرف بھیجتا ہے جہاں دو بڑے اور کچھ چھوٹے گھر ہوتے ہیں وہ طوفان اتنا خوفناک قسم کا ہوتا ہے کہ مسلمان دیکھ کر ڈر جاتے ہیں وہ طوفان جب ان کے گھروں کے اوپر آتا ہے تو تھم جاتا ہے مگر کالے سیاہ بادل گرج چمک اور تیز ہوا مسلمانوں کی گھروں کی چھت پر منڈلاتی رہتی ہے یہ سب ایک بہت بڑے ہوائی بھنور کی شکل میں گھوم رہا ہوتا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ ابھی یہ سب کچھ تباہ کر دے گا اور مسلمانوں کے گھروں پر ایک خوف طاری ہوجاتا ہے۔ کسی عالم یا کسی عام مسلمان کی ہمت ہی نہیں پڑتی کچھ بولنے کی صرف مسلمان اللہ سے دعا کرتے ہیں کہ کسی طرح یہ طوفان ختم ہو جائے میں کہتا ہوں یہ سب دجال کر رہا ہے بہتر ہے دعاؤں کے ساتھ کچھ عملی کام بھی کرو۔ پھر میں دجال کو دیکھتا ہوں تو وہ آسمان کو دیکھ رہا ہوتا ہے پھر اچانک دجال اپنے بازو ہوا میں بلند کرتا ہے میں کہتا ہوں دجال کچھ کرنے لگا ہے اس سے پہلے کہ وہ کچھ کرے بہتر ہے میں نیچے چلا جاؤں میں جیسے ہی نیچے کی طرف جانے لگتا ہوں تو ساتھ ہی بارش ہونے لگتی ہے۔ میں جلدی سے نیچے جاتا ہوں میں دیکھتا ہوں کہ بارش کا پانی چھت سے نیچے ٹپک رہا ہوتا ہے میں کہتا ہوں یہ پانی چھت سے کس طرح ٹپک رہا ہے چھت میں تو کوئی سوراخ بھی نہیں پھر میں ایک منزل نیچے جاتا ہوں تو وہ پانی نیچے والی منزل کی چھت سے بھی اسی طرح ٹپک رہا ہوتا ہے یہ سب دیکھ کر میں حیران ہو جاتا ہوں کہ یہ سب کیسے ہو رہا ہے اس طرح تو یہ گھر تباہ ہو جائے گا اور کچھ لوگ بھی یہ دیکھ کر پریشان ہو جاتے ہیں

میں پھر چھت پر جاتا ہوں بارش اتنی زیادہ ہوتی ہے کہ دور تک کچھ نظر نہیں آتا میں چھت سے گھر کے نیچے دیکھتا ہوں تو وہاں پانی سارے گھر کے اندر جمع ہو چکا ہوتا ہے اور بیرونی دیوار تک پہنچ چکا ہوتا ہے پانی کی لہریں دیوار سے ٹکرا رہی ہوتی ہیں ایسا لگتا ہےکہ جیسے وہ پانی بیرونی دیوار کو توڑ دے گا پھر میں مین گیٹ کی طرف دیکھتا ہوں تو وہ بند ہوتا ہے میں یہ دیکھ کر کہتا ہوں مجھے مین گیٹ کھول دینا چاہیے تاکہ پانی باہر نکل جائے اور دیوار پر سے دباؤ ختم ہو جائے ورنہ کہیں دیوار ٹوٹ ہی نہ جائے میں نیچے آتا ہوں وہاں کافی لوگ پانی میں ڈوب رہے ہوتے ہیں میں تیر کر مین گیٹ تک جاتا ہوں اور مین گیٹ کھول دیتا ہوں سارا پانی مین گیٹ سے باہر نکل جاتا ہے اور ڈوبتے لوگوں کی جان بچ جاتی ہے لوگ کہتے ہیں قاسم اگر تم گیٹ نہ کھولتے تو ہم ڈوب جاتے اچانک فوج کے کچھ لوگ آتے ہیں اور کہتے ہیں ہمارے گھر میں کچھ لوگوں نے حملہ کر دیا ہے آپ سب لوگ محتاط رہیں لوگ کہتے ہیں ایک مسئلہ ختم ہوا ہے تو دوسرا آگیا فوج کے لوگ لڑنے کے لئے نکل جاتے ہیں میں گھر سے ہتھیار لے کر فوج کے پیچھے جاتا ہوں میں دیکھتا ہوں گھر کے پیچھے کی جانب ایک بلڈنگ سی ہوتی ہے اور فوج وہاں کچھ لوگوں سے لڑ رہی ہوتی ہے مگر دشمن بہت مضبوط ہوتا ہے اور آرمی کے پاس جو اسلحہ ہوتا ہے وہ اتنا پاورفل نہیں ہوتا اور کم بھی ہوتا ہے اس بلڈنگ میں دشمنوں نے بہت مضبوط مورچہ بندی کی ہوتی ہے اور وہاں سے فائر کر رہے ہوتے ہیں اور فوج کے پاس کوئی ایسا ہتھیار نہیں ہوتا جو ان مورچوں کو تباہ کر سکے میرے پاس جو ہتھیارہوتا ہے وہ ایک بڑی گن ٹائپ کا ہوتا ہے اس میں ایک دوربین بھی ہوتی ہے میں ایک جگہ چھپ کر دوربین سے دیکھتا ہوں تو مجھے دیوار کی دوسری طرف بھی کلیئر نظر آتا ہے پھر میں نشانہ لگا کر فائر کرتا ہوں تو اس گن کا فائر اس مضبوط دیوار کے اندر سے نکل کر دشمن کو لگتا ہے تو وہیں مر جاتا ہے میں کہتا ہوں یہ کیسی گن ہے جو دیوار کے اس پار بھی دیکھ لیتی ہے اور گولی بھی دیوار کے اس پار نکل جاتی ہے میں ایک ایک کرکے سب کو مارنا شروع کر دیتا ہوں اتنی دیر میں فوج بھی مجھے دیکھ لیتی ہے اوروہ حیران ہوتے ہیں کہ اس کے پاس کون سی گن ہے میں ان سے کہتا ہوں یہ دشمن بہت ہی طاقتور ہیں یہ اسی گن سے مریں گے پھر ہم ایک کمرے میں آتے ہیں وہاں ایک آدمی پوری بلڈنگ کو کنٹرول کر رہا ہوتا ہے میں اسے دیکھ کر کہتا ہوں یہ تو دجال کا آدمی ہے یعنی لوگوں کو دجال نے بھیجا تھا تبھی یہ دشمن اتنے طاقتور تھے۔ میں اس آدمی کو پکڑ لیتا ہوں اور فوج سے کہتا ہوں اس کو حفاظت سے رکھنا یہ بتائے گا کہ اس کو بھیجنے والا کہاں رہتا ہے میں فوج کو نہیں بتاتا کہ ان لوگوں کو دجال نے بھیجا تھا پھر ہم واپس آتے ہیں فوج کے لوگ کہتے ہیں دشمن ختم ہوگئے ہیں سب لوگ خوش ہو جاتے ہیں اور فوج کے لوگ بتاتے ہیں کہ ان سب دشمنوں کو قاسم نے مارا ہے لوگ سن کر حیران ہوتے ہیں اور کہتے ہیں قاسم تم نے دشمنوں کو کس طرح ختم کر دیا یہ وردی اور یہ گن تمہارے پاس کہاں سے آئی کیا تم فوجی ہو؟ میں کہتا ہوں میں اللہ کا سپاہی ہوں اور میں نے ان دشمنوں کو اللہ کی مدد سے ختم کیا ہے اور پھر میں دجال کو ذہن میں لا کر شاید یہ کہتا ہوں کہ ابھی تو جنگ شروع ہوئی ہے مجھے نہیں پتہ کہ اس خوفناک طوفان نے کتنی تباہی مچائی ان گھروں پے! کیونکہ تیز بارش کی وجہ سے میں اس طرف دیکھ ہی نہ سکا اور اپنے گھر کو بچانے کے چکر میں موقع ہی نہیں ملا اس طرف دیکھنے کا

You may also like

پاکستان ميں کرونا وائرس کم ہونے کی اصل وجہ
پاکستان میں کورونا وائرس کے کم ہونے کی اصل وجہ کیا ہے؟ ٢٩ جولائی ٢٠٢٠ کو محمّد قاسم نے خواب میں عمران خان کو جب وہ وجوہات بتائیں تو عمران خان بھی چونک پڑے. قاسم نے کہا کورونا وائرس آپ کے سمارٹ لاک داؤن کی وجہ سے کم نہیں ہوا بلکہ یہ الله کی خاص [...]
1238

Page 1 of 8

Leave a Reply